Sunday, March 2, 2008

ھر کوئی آلودگی کا ھے شکار

ھر کوئی آلودگی کا ھے شکار
از
ڈاکٹر احمد علی برقی اعظمی
ذاکرنگر، نئی دھلی

آج کل ماحول ھے نا سازگار
ھر طرف ھے ایک ذھنی انتشار
ھے بڑے شھروں میں جینا اک عذ اب
ھر کوئی آلود گی کا ھے شکار
آرھے ھیں لوگ شھروں کی طرف
گاؤں کا نا گفتہ بھ ھے حال زار
نت نئے امراض سے ھے سابقھ
پر خطر ھے گرد ش لیل و نھار
آرھا ھے جس طرف بھی دیکھئے
ایک طوفان حواد ث بار بار
بڑھتی جاتی ھے گلوبل وارمنگ
لوگ ھیں جس کے اثر سے بیقرار
ھے دگر گوں آج موسم کا مزاج
گرد ش حالات کے ھیں سب شکار
جس کو دیکھو بر سر پیکار ھے
دامن انسانیت ھے تار تار
ھے گلوبل وارمنگ احمد علی
اک مسلسل کرب کی آئینھ دار

No comments: