Sunday, October 5, 2008

بیاد مولانا ابوالکلام آزاد

بیاد مولانا ابوالکلام آزاد
ڈاکٹراحمد علی برقی اعظمی

شخصیت آزاد کی تہی مرجع اہل نظر
ان کو حاصل تھا جہاں میں عزو جاہ وکروفر
ھے" غبار خاطر" ان کے فکرو فن کی ترجمان
ان کے رشحات قلم ہیں مظہرعلم و ہنر
ان کی عظمت کے نشاں ہیں" الہلال" و" البلاغ"
جن میں ہیں اردو صحافت کے سبہی لعل و گہر
"ترجمان القرآں" ھے ان کی بصیرت کی گواہ
ان کی اردو،فارسی، عربی، پہ تہی گہری نظر
شخصیت پر ان کی یہ اقبال کا صادق ھے قول
ہوتے ھیں پیدا بڑی مشکل سے ایسے دیدہ ور
ان کی تحریروں سے عصری آگہی ھے ھمکنار
ان کی تقریریں ھیں اک آئینہ نقد و نظر
اس صدی کی تھے وہ برقی شخصیت تاریخ ساز
ان کا فن آئینہ ایام میں ھے جلوہ گر

No comments: